ہر پاکستانی کی خبر

مشہور فلم جس نے دہائیوں پہلے مصنوعی ذہانت کے بارے میں خبردار کیا تھا۔

Image Source - Google | Image by
GEO News

انسانی اندازوں سے زیادہ خطرناک سمجھی جانے والی مصنوعی ذہانت کی ٹیکنالوجی زور پکڑتی نظر آرہی ہے، یہی وجہ ہے کہ ایک ہزار سے زائد ٹیکنالوجی ماہرین مصنوعی ذہانت کو انسانیت کے لیے خطرہ قرار دے چکے ہیں۔

یہاں تک کہ ٹیسلا اور اسپیس ایکس جیسی کمپنیوں کے مالک ایلون مسک نے مصنوعی ذہانت (اے آئی) ٹیکنالوجی پر کام کرنے والی کمپنیوں سے کہا ہے کہ وہ مزید جدید ترین اے آئی سسٹمز کی ترقی کو عارضی طور پر روک دیں۔

ایلون مسک نے یہ مطالبہ خود کے ساتھ ساتھ اے آئی ٹیکنالوجی کے ماہرین اور ٹیکنالوجی کی صنعت سے وابستہ لوگوں کی طرف سے لکھے گئے ایک کھلے خط میں کیا۔

Image Source - Google | Image by
GEO News

خط میں کہا گیا ہے کہ انسانی ذہانت کا مقابلہ کرنے والے AI نظام معاشرے اور انسانیت کے لیے خطرہ بن سکتے ہیں۔

تاہم، کیا آپ جانتے ہیں کہ کئی دہائیوں قبل کینیڈا کے ایک ڈائریکٹر نے مصنوعی ذہانت کے خلاف ایک مشہور فلم انتباہ بنائی تھی؟

ہم بات کر رہے ہیں کینیڈین فلم ڈائریکٹر جیمز کیمرون کی جنہوں نے مشہور اداکار آرنلڈ شوارزنیگر کے ساتھ (39 سال قبل) 1984 میں مشہور فلم ‘دی ٹرمینیٹر’ بنائی تھی۔

اب جیمز نے مصنوعی ذہانت پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے ‘ٹرمینیٹر’ بنا کر آپ لوگوں کو خبردار کیا تھا لیکن کسی نے توجہ نہیں دی۔


ایک حالیہ انٹرویو میں جیمز کیمرون نے کہا کہ 1984 کی سائنس فکشن فلم ‘ٹرمینیٹر’ میں وارننگ ہونی چاہیے تھی لیکن آپ لوگوں نے ایک نہیں سنی۔

انہوں نے امکان ظاہر کیا کہ مصنوعی ذہانت کے میدان میں بھی ہم آج ایٹمی ہتھیاروں کی دوڑ جیسی جنگ میں ہوں گے۔

جیمز کیمرون نے کہا ہے کہ میدان جنگ میں مصنوعی ذہانت اتنی بجلی کی رفتار سے کام کرے گی کہ انسان مداخلت نہیں کر سکیں گے، امن مذاکرات اور جنگ بندی کے کسی بھی امکان کو ختم کر دیں گے۔

فلم کے ڈائریکٹر نے کہا، "آئیے 20 سال انتظار کریں اور اگر کوئی مصنوعی ذہانت بہترین اسکرین پلے کے لیے آسکر جیتتی ہے، تو مجھے لگتا ہے کہ ہم اسے سنجیدگی سے لیں گے۔”

یاد رہے کہ فلم The Terminator ایک سائبر کلر پر مبنی تھی جسے کمپیوٹر نے بنایا تھا۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تازہ ترین

ویڈیو

Scroll to Top

ہر پاکستانی کی خبر

تازہ ترین خبروں سے باخبر رہنے کے لیے ابھی سبسکرائب کریں۔