ہر پاکستانی کی خبر

پی ٹی آئی کارکنوں کی نظربندی کالعدم قراراور تمام افراد کو فوری رہا کیا جائے۔

Image Source - Google | Image by
Dunya Urdu

لاہور ہائی کورٹ نے 9 مئی کے واقعے کے بعد حراست میں لیے گئے تمام افراد کو فوری رہا کرنے کا حکم دیا ہے۔

جسٹس صفدر سلیم شاہد نے 9 صفحات پر مشتمل فیصلہ لکھا۔

عدالت نے لاہور سمیت 11 اضلاع میں پی ٹی آئی کارکنوں کی حراست کو غیر قانونی قرار دے دیا۔

فیصلے میں کہا گیا کہ ڈاکٹر یاسمین راشد اور دیگر کی نظر بندی کے احکامات غیر قانونی ہیں، کئی شہروں میں کارکنوں کی نظر بندی کے احکامات کو بھی کالعدم قرار دیا گیا ہے۔

گجرات ننکانہ صاحب، گوجرانوالہ، سیالکوٹ اور نارووال میں کارکنوں کی حراست کو خلاف قانون قرار دیا گیا۔

عدالتی فیصلے کے مطابق، 9 مئی کو پیش آنے والے پرتشدد واقعے نے ایک پرامن اور جمہوری قوم کی غلط تصویر پیش کی۔ حکومت امن و امان کو برقرار رکھنے کے لیے جوابدہ تھی، اس کے باوجود انہوں نے 9 مئی کے واقعے پر غور کیے بغیر متعدد گرفتاریاں کیں۔

حکومت کے پاس شواہد ہونے پر ملزمان کو گرفتار کرنے کا کافی وقت تھا، لیکن اس کے بجائے انہیں جیل میں ڈال دیا گیا۔ اس سے پبلک مینٹس آرڈیننس 1960 کے سیکشن کی خلاف ورزی ہوتی ہے، جس کے تحت تمام قیدیوں کی فوری رہائی کی ضرورت ہے۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تازہ ترین

ویڈیو

Scroll to Top

ہر پاکستانی کی خبر

تازہ ترین خبروں سے باخبر رہنے کے لیے ابھی سبسکرائب کریں۔