ہر پاکستانی کی خبر

لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف کی پارٹی صدارت بحال کرنے کی درخواست ناقابل سماعت قرار دی۔

Image Source - Google | Image by
Dunya Urdu

لاہور ہائیکورٹ نے میاں نواز شریف کی پارٹی صدر کے عہدے پر بحالی کی درخواست ناقابل سماعت قرار دیتے ہوئے مسترد کر دی۔

آفاق احمد نامی مقامی وکیل لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس باقر علی نجفی کے سامنے ایک درخواست لے کر آئے جس میں دعویٰ کیا گیا کہ نواز شریف کے ساتھ جو ہوا وہ اب عمران خان کے ساتھ ہو رہا ہے۔

عدالت نے درخواست گزار سے کہا کہ وہ اپنی درخواست پڑھ کر سنائیں۔

درخواست گزار نواز شریف کو دوبارہ پارٹی صدر بنانا چاہتے تھے۔ انہوں نے یہ بھی استدعا کی کہ عمران خان، شیخ رشید، سراج الحق صادق اور امین کے خلاف کارروائی کی جائے اور الیکشن کمیشن ان کا ریکارڈ درست کرے۔

عدالت نے کہا کہ نواز شریف کو سپریم کورٹ نے دو مقدمات میں نااہل قرار دیا ہے، اور ریلیف حاصل کرنے کا واحد طریقہ سپریم کورٹ میں اپیل کرنا ہے، جس کے پاس ان کی بحالی کا حکم دینے کا اختیار ہے۔

عدالت نے رجسٹرار آفس کی جانب سے اٹھائے گئے اعتراض کی بنیاد پر درخواست کو برقرار رکھا۔

گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ کے رجسٹرار آفس نے نواز شریف کی پارٹی صدارت بحال کرنے کی درخواست پر اعتراض اٹھایا تھا جسے یاد رکھنا ضروری ہے۔

رجسٹرار آفس نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ چونکہ نواز شریف کو سپریم کورٹ نے نااہل قرار دیا ہے اس لیے درخواست گزار کو سپریم کورٹ سے ریلیف طلب کرنا چاہیے کیونکہ لاہور ہائی کورٹ اس کے ماتحت ہے اور اس کی سماعت نہیں کر سکتی۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تازہ ترین

ویڈیو

Scroll to Top

ہر پاکستانی کی خبر

تازہ ترین خبروں سے باخبر رہنے کے لیے ابھی سبسکرائب کریں۔