ہر پاکستانی کی خبر

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے الیکشن کمیشن کو رقم فراہم کرنے کی تجویز منظور نہیں کی۔

Image Source - Google | Image by
National Assembly of Pakistan

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے پنجاب اور کے پی میں آئندہ انتخابات کے لیے الیکشن کمیشن کو فنڈز فراہم نہ کرنے کا متفقہ فیصلہ کیا ہے۔

قومی اسمبلی میں قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے اس بل کو مسترد کر دیا جس میں الیکشن کمیشن کو پنجاب اور کے پی میں آئندہ انتخابات میں مدد کے لیے مزید رقم فراہم کی جائے گی۔ کمیٹی نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا کہ رقم کی ضرورت نہیں ہے، کیونکہ کمیشن پہلے سے ہی اچھی طرح سے فنڈز فراہم کر چکا ہے۔

کمیٹی نے کہا کہ بل کو فنڈ دینے کے لیے کافی رقم نہیں ہے، اس لیے انہوں نے اسے مسترد کرنے کا فیصلہ کیا۔ ممبر خالد مگسی نے الیکشن کمیشن کے سیکرٹری کو بتایا کہ ہمیں افسوس ہے کہ انہیں بل کی فنڈنگ ​​کے لیے اتنی رقم نہیں ملی۔

سپریم کورٹ نے پنجاب میں انتخابات 14 مئی کو کرانے کا حکم دیتے ہوئے الیکشن کمیشن کو 10 اپریل تک رقم فراہم کردی۔

مقررہ مدت گزر جانے کے بعد، الیکشن کمیشن نے سپریم کورٹ کو رپورٹ کیا کہ حکومت نے پنجاب میں انتخابات کے لیے فنڈز فراہم کرنے کے لیے کوئی رقم نہیں دی۔

الیکشن کمیشن کو پنجاب میں انتخابات کرانے کے لیے 21 ارب روپے درکار ہیں تاہم قومی اسمبلی کی کابینہ اس بات پر متفق نہیں ہو سکی کہ الیکشن کے لیے کتنی رقم مختص کی جائے۔ بتایا گیا ہے کہ کابینہ کے کچھ ارکان کو خدشہ ہے کہ پنجاب الیکشن پر بہت زیادہ رقم خرچ کرنے سے ملک بھر میں ایک ہی دن انتخابات میں مشکلات پیدا ہوں گی۔

Leave a Comment

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

تازہ ترین

ویڈیو

Scroll to Top

ہر پاکستانی کی خبر

تازہ ترین خبروں سے باخبر رہنے کے لیے ابھی سبسکرائب کریں۔